یو سی نگری بالا، کرنل شبیرنے دھاندلی کے الزامات بےبنیاد قرار دے کر مسترد کر دئیے

ایبٹ آباد (نمائندہ خصوصی) کرنل ریٹائرڈ سردار شبیر احمد نے یو سی نگری بالا میں دھاندلی کے الزامات مسترد کر دئیے۔ پوری یونین کونسل کے تمام 13 پولنگ سٹیشنز پر پولنگ شفاف اور پرامن طور پر ہوئی تھی دوبارہ انتخاب کرانے کے مطالبات بلاجواز ہیں، تفصیلات کے مطابق سابق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی سردار محمد یعقوب کے فرزنداور یونین کونسل نگری بالا سے نو منتخب رکن ضلع کونسل کرنل ریٹائرڈ سردار شبیر احمد نے دی گلیات ٹائمز کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں کہا کہ یونین کونسل نگری بالا میں حالیہ بلدیاتی انتخابات میں دھاندلی کے الزامات بلاجواز اور بےبنیا د ہیں۔ یونین کونسل نگری بالا میں دھاندلی کے الزامات اور دوبارہ انتخابات کے مطالبات کے بارے میں سوال کے جواب میں انہوں نے ان الزامات کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہوئے کہا کہ 30 مئی کوانتخابی عمل بروقت شروع ہوا ہے پولنگ سٹیشنز کے اندر موجود تمام افراد کو ووٹ دینے کا حق اور موقع دینے کے بعد شام گئے یہ عمل مکمل ہوا اس دوران یونین کونسل کے تمام 13 پولنگ سٹیشنز پر مجموعی طور پر انتخابی عمل خوشگوار انداز میں جاری رہا اور کہیں بھی امن و امان کا کوئی بڑا مسلہ پیدا نہیں ہوا، ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے کے بعد موقع پر ہی نتائج کا اعلان کر دیا گیا تھا جو اس بات کا ثبوت ہے کہ پولنگ شفاف، پرامن اور غیر جانبدارانہ انداز میں ہوئی اور دھاندلی کے الزامات بے بنیاد ہیں، کرنل شبیرنے کہا کہ وہ اس بات کو تسلیم کرتے ہیں کہ انتظامیہ نے اس بار انتخابی عمل احسن طریقے سے منعقد نہیں کرایا۔ یونین کونسل نگری بالا میں دوبارہ انتخابات کرانے کے سلسلہ میں ریٹرننگ آفیسر کی سفارشات الیکشن کمیشن نے مسترد کرکے فیصلہ دے دیا ہے، انہوں نے کہا کہ ریٹرننگ آفیسر نے کچھ بارسوخ افراد کے دباؤ کے نتیجے میں دوبارہ انتخاب کی غیر معقول تجویز دی تھی جو الیکشن کمیشن نے مسترد کر دی ہے۔ سردار نیاز احمد کی طرف سے سردار محمد یعقوب اور کرنل شیبر پر متعلقہ افسران کو رشوت دے کرتحصیل کونسل کے نتائج تبدیل کرا کے سردار خالد کو جتوانے کے الزامات کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں سردار شبیر نے کہا کہ انہوں نے ممبر ضلع کونسل کے لئے انتخاب تحصیل کونسل کے امیدواروں کی حمایت کے بغیر لڑا تھا اور انہوں نے ان میں سے کسی بھی امیدوار کی حمایت نہیں کی تھی۔ ایسا تحصیل کونسل کے امیدواروں کے وجہ سے بعض مجبوریوں کی وجہ سے کرنا پڑا۔ پینل کے طور پر انتخاب لڑنا اور جیتنا مشکل تھا۔ کسی تیسرے شخص کے لئے رشوت دینا اور نتائج تندیل کرانا ناقابل تصور ہے اس طرح کے الزامات یا کام کرنا دونوں ہی غیر معقول اور غیر اخلاقی ہیں۔ ہر کوئی مجے اور میرے خاندان کو جانتا ہے، لوگوں کو معلوم ہے کہ ہم اس طرح کے کام نہیں کرتے۔ اس معاملے میں مجھے ایک ایسے گناہ یا جرم میں ملوث کرکے مطعون کیا گیا جو میں نے کبھی کیا ہی نہیں۔ میں اس طرح کے بے بنیاد الزامات کی سختی سے تردید کرتا ہوں اور مجھے پورا یقین ہے کہ سردار نیاز اس طرح کے مبہم اور غیر زمہ دارانہ بیانات نہیں دے سکتے۔ کرنل سردار شبیر احمد سے انٹرویو کی باقی تفصیلات بعد میں شائع کی جائیں گی۔

Related posts

Leave a Comment